قطر ؛ نومولود کو ایئرپورٹ کے واش روم میں پھینکنے والی خاتون کا پتہ چلا لیا گیا

دوحہ: قطر پولیس نے دوحہ انٹرنیشنل ایئرپورٹ کے واش روم کے کچرے دان میں نومولود کو پھینک کر فرار ہونے والی خاتون کا سراغ لگا لیا ہے۔عالمی خبر رساں ادارے کے مطابق 2- اکتوبر کو دوحہ ایئرپورٹ کے واش روم کے کچرے دان سے نوزائیدہ بچی ملی تھی، یہ واقعہ اُس وقت پیش آیا تھا جب وہاں سے ایک طیارہ آسٹریلیا کے لیے پرواز بھرنے والا تھا۔

ایئرپورٹ عملے نے آسٹریلیا جانے والی پرواز کی 18 سے زائد خواتین کی نیم برہنہ حالت میں تلاشی لی تھی جس پر آسٹریلیا،نیوزی لینڈ اور برطانیہ نے اپنے ملک کی خواتین کیساتھ نازیبا سلوک پر احتجاج کرتے ہوئے قطر کے لیے پروازیں بند کرنے کی دھمکی دی تھی۔ دوسری جانب ایئرپورٹ انتظامیہ نے موقف اختیار کیا تھا کہ تلاشی کا عمل نومولود کی والدہ تک پہنچنا تھا اور تلاشی کا یہ عمل ملکی قوانین پر مکمل عمل کرتے ہوئے کیا گیا۔ زچگی کا معائنہ کرنا قواعد میں شامل ہے۔

ادھر قطر کے امیر حمد بن الثانی اور وزیر خارجہ کو اس واقعے پر معافی مانگنا پڑی تھی اور خواتین کی نازیبا تلاشی لینے والے اہکاروں کو معطل کردیا گیا تھا جس کے بعد آسٹریلیا نے قطر کے لیے پروازوں کی بحالی کا اعلان کیا تھاتازہ پیشرفت میں قطر پولیس نے دعویٰ کیا ہے کہ نومولود کا ڈی این اے ایک شخص سے مل گیا ہے جس نے دوران تفتیش انکشاف کیا کہ بچی کی ماں ایشیائی خاتون ہیں جن کے ساتھ جنسی تعلقات کے نتیجے میں یہ بچی پیدا ہوئی تھی۔

نومولود کے باپ نے پولیس کو یہ بھی بتایا کہ ایشیائی خاتون نے اپنے ملک جاتے ہوئے ایئرپورٹ سے بچی کی تصویر بھیجی تھی۔ پولیس نے خاتون کی شناخت ظاہر کرنے سے انکار کردیا ہے اور یہ بھی واضح نہیں کہ گرفتار باپ کیخلاف کیا قانونی چارہ جوئی کی جائے گی۔