دُبئی میں پاکستانی کرایہ دار کو قتل کی دھمکیاں دینے والے کو قید ہو گئی

دُبئی(نیوزڈسک) دُبئی میں ایک پاکستانی کرایہ دار کو دھمکیاں دینے والے ہم وطن کو عدالت نے تین ماہ کے لیے جیل بھیج دیا ہے۔ استغاثہ کے مطابق 37 سالہ پاکستانی اپنے مالک کی جانب سے رہائش گاہوں کا کرایہ اکٹھا کرنے کا کام کرتا ہے۔ جس کا ایک پاکستانی کرایہ دار سے کرایہ ادا نہ کرنے پر جھگڑا ہوا تو ملازم نے اسے قتل کرنے کی دھمکیاں دے دیں۔

پاکستانی کرایہ دار کی جانب سے پولیس کو شکایت لگانے پر ملازم کو گرفتار کر لیا گیا۔ 51 سالہ کرایہ دار نے عدالت کو بتایا کہ وہ ڈیرہ کے علاقے المرقبت کے ایک وِلا میں اپنے گھر والوں سمیت مقیم ہے۔ اس ولا میں اس کی فیملی سمیت 6 خاندان مقیم ہیں جواپنا اپنا کرایہ ادا کرتے ہیں۔ جولائی کے مہینے میں پاکستانی ملازم نے اس سے فون پر کرائے کی 28سو درہم کی رقم کا تقاضا کیا۔

کیونکہ سارے لوگوں سے کرایہ اکٹھا کرکے میں ہی پہنچاتا ہوں۔ تاہم میں نے اسے بتایا کہ فی الحال مجھے کمپنی نے تنخواہ نہیں دی ، وہ کچھ روز مزید انتظار کر لے تاکہ میں رقم کا بندوبست کر لوں۔ مگر یہ شخص مجھے مسلسل کالز پر کالز کرتا رہا جس پر تنگ آ کر میں نے جواب دینا چھوڑ دیا۔ ایک روز پاکستانی ملازم میرے گھر آیا تو میری بیوی نے دروازہ کھولا۔

اس شخص نے میری بیوی کو دھمکی کہ اگر کرایہ ادا نہ کیا گیا تو وہ مجھے قتل کر ڈالے گا۔ اور یہ بھی کہا کہ میں کرایہ ادا نہیں کر سکتا تو پاکستان دفع ہو جاؤں۔ اس شخص کی دھمکیوں پر میری بیوی خوف زدہ ہو گئی۔ جس کے بعد میں نے پولیس کو اطلاع دے دی۔ عدالت میں ملزم نے اعتراف کیا کہ کرایہ ملنے میں تاخیر پر اس نے دھمکیاں دی تھیں، مگر وہ عملی طور پر ایسا کرنے کا سوچ بھی نہیں سکتا تھا۔ ملزم کو تین ماہ قید کے علاوہ ڈی پورٹ کیے جانے کی سزا بھی دی گئی ہے۔