کورونا : تیونس کے 6 صوبے خطرناک، مراکش میں دوسری لہر

تیونس میں کورونا وائرس کے کیسز میں غیر متوقع اضافے کے بعد 6 بڑے صوبوں کو خطرناک قرار دے دیا گیا ہے جبکہ مراکش میں وبا کی دوسری لہر کے باعث 3445 افراد وائرس کا شکار ہوئے ہیں۔
تفصیلات کے مطابق تیونسی خبر رساں ادارے نے کہا ہے کہ ’وزارت صحت نے 24 صوبوں میں کورونا وائرس کا جائزہ لینے کے بعد 6 صوبوں کو انتہائی خطرناک قرار دیا ہے‘۔
واضح رہے کہ تیونسی حکومت نے گزشتہ جمعرات کو دار الحکومت تیونس سمیت اریانہ، بن عروس اور منوبہ میں رات 8 بجے سے صبح 5 بجے تک کرفیولگا دیا تھا۔تیونسی وزارت صحت نے کہا ہے کہ ’تمام شہری کرفیو کی پابندی کریں، سماجی فاصلہ رکھیں اور بھیڑ سے بچنے کے علاوہ فیملی ملاقاتوں سے دور رہیں‘۔
دوسری طرف مراکش میں کورونا کے کیسز میں اضافہ ریکارڈ کیا گیا ہے۔ گزشتہ 24 گھنٹوں میں 3445 نئے مریضوں کی تصدیق کے بعد کورونا کے کیسز میں ایک لاکھ 46 ہزار398 تک اضافہ ہوگیا ہے۔مراکشی نیوز ایجنسی کے مطابق وزارت صحت نے کہا ہے کہ ’گزشتہ دن 44 افراد کورونا کے باعث ہلاک ہوئے ہیں‘۔
’ہلاک شدگان کی کل تعداد بڑھ کر 2530 ہوگئی ہے جبکہ مجموعی طور پر ایک لاکھ 23 ہزار افراد شفایاب ہوگیے ہیں‘۔
’اس وقت زیر علاج مریضوں کی تعداد 20 ہزار 846 ہے‘۔