کووڈ 19 موسمِ سرما میں تیزی سے پھیل سکتا ہے، قومی ادارہ صحت

اسلام آباد: قومی ادارہ برائے صحت نے موسمِ سرما میں کووڈ 19سمیت سات بیماریوں کے تیزی سے پھیلنے کا خدشہ ظاہر کرتے ہوئے صحت کے حکام کو ہائی الرٹ رہنے کی تجویز دی ہے۔

رپورٹ کے مطابق موسمی آگاہی اور انتباہ (ایس اے اے ایل) کے نام سے جاری ہدایات نامے میں بتایا گیا ہے کہ کووڈ 19، کریمن کانگو، نکسیر بخار کا وائرس، ڈینگی بخار، ڈفتھیریا، پرٹوس، موسمی نزلہ زکام کے علاوہ ایکس ڈی آر (ایکسٹینسو ڈرگ ریزسٹنس) ٹائیفائیڈ جیسی بیماریاں اکتوبر سے فروری کے درمیان تیزی سے پھیل سکتی ہیں۔

قومی ادارہ صحت کے جاری کردہ بیان کے مطابق موسمی آگاہی اور انتباہ کا بنیادی مقصد صحت کے تمام حکام اور متعلقہ پیشہ ور افراد کو ہر سطح پر ان وبائی امراض سے بروقت اور موثر اندازمیں لڑنے کے لیے تیار کرنا ہے۔

این آئی ایچ نے اپنے خط میں خبردار کیا ہے کہ یہ بیماریاں سردی کے موسم میں تیزی سے پھیل سکتی ہیں، جبکہ اس میں قومی اور عالمی عوامی صحت کے واقعات جیسے ہیومن ایمیونو ڈیفیشنسی وائرس (ایچ آئی وی/ ایڈز) کو قومی جبکہ ایبولا وائرس ڈیزیز کے بارے میں بھی بتایا گیا جو مستقبل میں کسی بھی ملک اور خطے کے لیے خطرہ ہوسکتی ہیں۔

خط میں کہا گیا کہ ’گزشتہ 5 سال کے اعدادوشمار کو دیکھتے ہوئے قومی ادارہ صحت نے تمام وفاقی، صوبائی اور ضلعی محکموں کو مسلسل نگرانی کرنے اور متوقع موسمی صحت سے متعلق خطرات پر نگاہ رکھتے ہوئے اس کے تناظر میں تمام احتیاطی تدابیر اور علاج معالجے کے اقدامات کرنے کا کہا ہے‘۔

یاد رہے کہ وزیراعظم عمران خان نے رواں ہفتے موسم سرما کے دوران کووڈ19 کے کیسز تیزی سے بڑھنے کےحوالے سے خبردار کیا تھا۔

بعدازاں وزیر منصوبہ بندی و ترقی اور خصوصی اقدامات اسد عمر نے کہا کہ ریسٹورنٹس اور شادی ہالز کووڈ 19 کا مرکز بن چکے تھے۔

اسد عمر نے عوام سے اپیل کی تھی کہ وہ اس جان لیوا وائرس سے بچاؤ کے لیے دی جانے والی ہدایات پر سختی سے عمل کریں۔

نیشنل کمانڈ اینڈ آپریشن سینٹر سے کووڈ19 کے جاری کردہ اعدادو شمار کے مطابق اس وقت ملک میں کورونا کے 8 ہزار 528 کیسز فعال ہیں۔