سیب، ناشپاتی اور بیریاں بلڈ پریشر کنٹرول کرنے میں انتہائی مفید قرار

سیب، بیریاں اور ناشپاتی ایسے پھل جو بلند فشار خون کنٹرول میں رکھنے میں انتہائی مفید ثابت ہوسکتے ہیں، یہ پھل اینٹی آکسیڈنٹس اور فلے وینوئڈز سے بھرپور ہوتے ہیں جو سرطان اور ذیابطیس جیسی بیماریوں سے بھی بچاتے ہیں۔

جیسا کہ آپ جانتے ہوں گے کہ سیب سب سے زیادہ وسیع پیمانے پر درخت پر کاشت ہونے والا پھل ہے، اس کا درخت مغربی ایشیا میں شروع ہوا، اور اب دنیا پھر میں بہ کثرت پایا جاتا ہے، اور یہ عارضہ قلب سمیت کئی امراض سے بچاؤ کے لیے بے حد مفید ہے تاہم اس کی مدد سے بلڈ پریشر بھی کنٹرول میں رکھا جاسکتا ہے۔

ناشپاتی کا رس دار میٹھا پھل غذائی اہمیت کے لحاظ سے انتہائی افادیت کا حامل ہے کیونکہ اس پھل کا استعمال انسانی جسم میں کولیسٹرول کی مقدار کم کرنے، جسم میں خون کی ترسیل بڑھانے میں اکسیر کا درجہ رکھتا ہے جب کہ بلڈ پریشر کنٹرول کرنے میں بھی انتہائی اہمیت کا حامل ہے۔

نئی تحقیق نے انکشاف ہوا ہے کہ ہمارے معدے اور آنتوں میں رہنے والے خردنامیے اور مختلف اقسام کے بیکٹیریا فلے وینوئڈز سے عمل کرکے بلڈ پریشر قابو میں رکھتے ہیں۔

شمالی آئرلینڈ میں واقع کوئنزیونیورسٹی کے سائنسدانوں کی تحقیق بتاتی ہے کہ فلے وینوئڈز کے انجذاب اور بلڈ پریشر قابو میں رکھنے میں معدے کے خردنامئے اہم کردار ادا کرتےہیں۔ اس طرح فلے وینوئڈز کا باقاعدہ استعمال بلڈ پریشر کو کم کرنے میں انتہائی مفید ثابت ہوسکتا ہے۔

بلیوبیری، اسٹرابری اور دیگر اقسام کی بیریوں کی روزانہ 80 گرام مقدار کھائی جائے تو اس سے چار درجے بلڈ بلڈ پریشر کم ہوجاتا ہے۔
واضح رہے کہ نارمل بلڈ پریشر کی پیمائش 120 اور 80 ہوتی ہے اور 140 سے 90 ایم ایم کو بلڈ پریشر کی بلند مقدار قرار دیا جاسکتا ہے۔