امریکی سینیٹائزرز میں‌ کینسر کا باعث بننے والے کیمیکل کی موجودگی کا انکشاف

واشنگٹن: امریکا کے محکمہ صحت نے انکشاف کیا ہے کہ کرونا سے بچاؤ کے لیے استعمال ہونے والے سینیٹائزر میں ایسے کیمیکل کا استعمال ہوا جو کینسر کا باعث بن سکتا ہے۔

امریکا میں کرونا سے بچاؤ کے لیے استعمال ہونے والے مختلف کمپنیوں کے ہینڈ سینیٹائزز میں خطرناک کیمیکلز کی موجودگی کا انکشاف ہوا۔محکمہ صحت کے مطابق ان سینیٹائرز میں ’بین زین‘ نامی کیمیکل پایا گیا ہے جو کینسر کی بیماری کا باعث بنتا ہے۔ماہرین نے شکایات کے بعد ان سینیٹائزر کو ٹیسٹنگ کے لیے لیبارٹری بھیجا، جس کی رپورٹ آنے پر ماہرین سر پکڑ کر بیٹھ گئے۔

کچھ ہینڈ سینیٹائزرز میں بڑی مقدار میں ایسے خطرناک کیمیکل موجود ہیں جو مہلک مرض سے متاثر کرسکتے ہیں۔ماہرین نے تحقیق کے دوران 168 مختلف کمپنیوں کی مارکیٹ میں دستیاب بوتلیں اٹھائیں اور اُن کا جائزہ لیا۔ جن میں سے 17 فیصد میں بین زین کی موجودگی کا انکشاف ہوا جبکہ 8 فیصد کمپنیوں کے سینیٹائزرز میں یہ کیمیکل خطرناک حد تک پایا گیا۔

فارمیسی کی جانچ کے نتائج کی ییل یونیورسٹی کے کیمیکل اینڈ بایوفیزیکل انسٹرومنٹیشن سینٹر اور بوسٹن اینالیٹیکل لیبارٹری اور محکمہ صحت نے بھی تصدیق کی ہے۔