جاپان کی پاکستان کو کووڈ-19 کی روک تھام کے لیے 95 لاکھ ڈالر کی گرانٹ

جاپان نے پاکستان کو کووڈ-19 کی روک تھام اور دیگر وبائی امراض کے خلاف اقدامات کے لیے اپنی گرانٹ میں مزید 95 لاکھ ڈالر کا اضافہ کردیا۔جاپان کے سفیر اور معاشی امور ڈویژن کے سیکریٹری نور احمد نے دستاویزات پر دستخط کیے: فوٹو: نوید صدیقی
اسلام آباد میں جاپان کے سفارت خانے سے جاری بیان کے مطابق اس حوالے سے دستاویزات پر جاپان کے سفیر متسوڈا کونینوری اور معاشی امور ڈویژن کے سیکریٹری نور احمد نے دستخط کیے اور دستاویزات کا تبادلہ کیا گیا۔

بیان میں کہا گیا کہ یہ گرانٹ آلات اور مشینری کی خریداری کے لیے استعمال ہوگی جو طبی اداروں کو مہیا کی جائے گی۔اس پروگرام کے تحت ایکسرے مشین کے علاوہ 30 اقسام کی طبی آلات پاکستان میں نیشنل ڈیزاسٹر منیجمنٹ اتھارٹی (این ڈی ایم اے) کے ذریعے ہسپتالوں کو فراہم کیے جائیں گے۔

بیان میں کہا گیا کہ این ڈی ایم اے نے 2007 میں اپنے قیام سے اب تک قومی سطح پر سیلاب، زلزلے، کووڈ-19 اور ٹڈی دل جیسے بحرانوں میں مؤثر اقدامات کیے ہیں۔بیان کے مطابق جاپانی سفارت خانہ اور این ڈی ایم اے پاکستان میں کووڈ-19 کے آغاز سے ایک دوسرے کے ساتھ مل کر کام کر رہے ہیں اور طبی اداروں میں صف اول میں کام کرنے والے عملے کو پہلی ترجیح دے رہے ہیں۔

اسلام آباد میں منعقدہ تقریب میں جاپان کے سفیر نے واضح طور پر کہا کہ ہماری گرانٹ سے نہ صرف کووڈ-19 کی روک تھام کے لیے صلاحیت میں اضافہ کرے گا بلکہ مستقبل میں کسی خطرے کے لیے بھی تیاری ہوگی۔انہوں نے کہا کہ حکومت جاپان نے عالمی طور پر کووڈ-19 جیسے نامعلوم وائرس سے نمٹنے کی ضرورت کو سمجھتے ہوئے اپنے تعاون کے حوالے سے بھرپور عزم دہرایا ہے۔

اس سے قبل جاپان نے رواں برس فروری میں پاکستان میں پہلا کیس سامنے آنے سے تین ہفتے قبل تشخیصی کٹس فراہم کی تھی، جس کے بعد عالمی اداروں کے ذریعے 74 لاکھ 10 ہزار ڈالر فراہم کر دیے ہیں۔بیان میں کہا گیا ہے کہ جاپان نے این ڈی ایم اے کے ذریعے پاکستان کو کووڈ-19 کی روک تھام کے لیے مجموعی طور پر ایک کروڑ 69 لاکھ 10 ہزار ڈالر کی گرانٹ دے دی ہے۔

یاد رہے یکم اپریل کو پاکستان میں قائم جاپان کے سفارت خانے سے جاری اعلامیے میں کہا گیا تھا کہ ‘جاپان کی حکومت نے اقوام متحدہ کے ادارے یونیسف کے ذریعے 16 لاکھ 20 ہزار ڈالر اور 5 لاکھ 40 ہزار ڈالر انٹرنیشنل آرگنائزین فار مائیگریشن (آئی او ایم) کے ذریعے حکومت پاکستان کو دینے کا فیصلہ کیا ہے’۔اعلامیے میں کہا گیا تھا کہ اس تعاون کا مقصد ‘پاکستان کے عوام کو نوول کورونا وائرس کے اثرات کے خلاف لڑنے کے لیے تیار کرنا ہے’۔جاپانی سفارت خانے کا کہنا تھا کہ ‘یہ تعاون پاکستان کی کورونا وائرس سے متاثرہ افراد کا فوری کھوج لگانے اور اسی کے مطابق علاج میں مددگار ہوگا’۔