سردیوں کی چھٹیوں کے پیش نظر سکولوں کو ہوم ورک دینے کے احکامات جاری

لاہور: سردیوں کی چھٹیوں کے پیش نظر سکولوں کو ہوم ورک دینے کے احکامات جاری کر دئیے گئے ہیں۔تفصیلات کے مطابق کورونا کیسز میں مسلسل اضافہ ہو رہا ہے۔تعلیمی اداروں میں بھی کورونا کیسز رپورٹ ہورہے ہیں جس کے بعد والدین بھی تشویش میں مبتلا ہیں۔سکولوں میں تعطیلات جلدی کرنے کی بھی اپیل کی جا رہی ہے۔کہا جا رہا ہے کہ کورونا کی وجہ سے حالات خراب ہو رہے ہیں۔
اگر وقت پر سخت فیصلے نہ کیے گئے تو کئی اموات کا بھی خطرہ ہے۔سکولز بند کرنے کی وجہ سے تاحال کوئی فیصلہ نہیں کیا جا سکا۔تعلیمی ادارے بند کرنے کا فیصلہ 23 نومبر کو ہو گا۔تاہم اب موسم سرما کی تعطیلات کے پیشِ نظر سرکاری سکولوں میں ہوم ورک دینے کے احکامات جاری کردیئے گئے۔
پنجاب کے تمام سی ای اوز ایجوکیشن کو مراسلہ جاری کردیا گیا ہے۔

واضح رہے کہ کورونا وبا کی دوسری لہر کے دوران تعلیمی اداروں میں کورونا وائرس کیسز سامنے آنے کا سلسلہ تیزی سے جاری ہے۔
تاہم صوبائی وزیر تعلیم مراد راس نے کورونا وائرس کے باعث موسم سرما کی چھٹیوں کی مخالفت کی۔ انہوں نے راولپنڈی میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ سب سے زیادہ کورونا ایس او پیز پر عملدرآمد اسکولوں میں کیا جا رہا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ اب تک 117 سکولوں میں کورونا وائرس کی تصدیق ہوئی ہے جبکہ 16 سکول سیل کیے گئے ہیں۔صوبائی وزیر تعلیم نے مزید کہا کہ پنجاب میں سکول بند کرنے کے حوالے سے کوئی فیصلہ نہیں ہوا ۔ میری سمجھ کے مطابق موسم سرما کی چھٹیاں نہیں ہونی چاہیے۔علاوہ ازیں صوبائی وزیر تعلیم برائے سکول ایجوکیشن پنجاب مراد راس نے کہا ہے کہ وزیر اعلیٰ پنجاب عثمان بزدار کی قیادت میں صوبہ پنجاب میںکورونا اور ڈینگی وائرس سے متعلق ایس او پیز پر عمل درآمد جاری ہے۔