منچھر جھیل میں پانی کی خطرناک سطح قائم، مزید دو مقامات پر کٹ لگانے کا فیصلہ

منچھر جھیل میں پانی کی خطرناک سطح قائم، مزید دو مقامات پر کٹ لگانے کا فیصلہ

پاکستان کی سب سے بڑی منچھر جھیل میں کٹ لگانے کے بعد بھی خطرہ نہ ٹل سکا، منچھر جھیل میں پانی کی خطرناک سطح بدستور قائم ہے، دباؤ کم کرنے کیلئے مزید 2 مقامات سے کٹ لگا کر پانی کے مزید اخراج کا فیصلہ کیا گیا ہے۔

اُدھر منچھر جھیل پر کٹ لگانے کے بعد سیہون شریف کے متعدد دیہات زیر آب آ گئے ہیں، جھیل کا سیلابی پانی تیزی سے مزید دیہاتوں کی طرف بڑھ رہا ہے۔

باغ یوسف کے مقام سے کٹ لگانے کے بعد سیلابی ریلے قریبی بستیوں تک پہنچ گئے ہیں، یونین کونسل آراضی اور چنا کے بھی سیکڑوں دیہات ڈوب گئے، جبکہ تاریخی بوبک کے چاروں اطراف پانی ہی پانی نظر آ رہا ہے۔

اطلاعات کے مطابق باجارا اور جہانگارا شہر بھی مکمل طور پر پانی میں ڈوب گئے، علاقہ مکینوں نے کشتیوں پر بیٹھ کر نقل مکانی شروع کر دی، کئی مقامات پر موٹر سائیکلیں اور گاڑیاں سیلابی پانی میں پھنس کر رہ گئی ہیں۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

متعلقہ خبریں