دہشتگردی کا مقدمہ، عمران خان عدالت میں پیش، ضمانت میں 12 ستمبر تک توسیع

ٓدہشتگردی کا مقدمہ، عمران خان عدالت میں پیش، ضمانت میں 12 ستمبر تک توسیع

پولیس افسران اور خاتون جج کو دھمکیاں دینے کے دہشتگردی کے مقدمے میں عمران خان اسلام آباد کی انسداد دہشتگردی عدالت میں پیش ہوئے، عدالت نے عمران خان کی ضمانت میں 12 ستمبر تک توسیع کر دی۔

چیئرمین تحریک انصاف عمران خان کی درخواست ضمانت پر انسداد دہشتگردی کی عدالت میں سماعت ہوئی، مقدمے کی سماعت عدالت کے جج راجہ جواد عباس حسن نے کی۔

عمران خان کے وکیل بابر اعوان نے عدالت میں عمران خان کی ضمانت کے لیے تحریری درخواست جمع کرائی اور جج سے مکالمہ کرتے ہوئے کہا کہ میرے مؤکل کو ضمانت دی جائے جس پر جج نے تبصرہ کیا کہ اس کی مثال نہیں، جو عدالت آتا ہے اسے ضمانت ملتی ہے، آپ کے مؤکل کو ضمانت کے لیے عدالت میں پیش ہونا ہو گا۔

دوران سماعت بابر اعوان ایڈووکیٹ نے عمران خان کو دیا گیا دھمکی آمیز خط عدالت میں جمع کرا دیا جس پر جج نے کہا کہ عمران خان کے خلاف دھمکیاں دینے سے متعلق مقدمے کی سماعت بھی آج ہی ہو گی، جس کے بعد عدالت نے مقدمے کی سماعت 12 بجے تک ملتوی کر دی۔

بعد ازاں سابق وزیراعظم عمران خان اسلام آباد کی انسداد دہشتگردی عدالت میں پیش ہوئے، عدالت نے دلائل سنے اور  پہلے سے جمع کرائے گئے مچلکوں پر ضمانت منظور کر لی، اس کے بعد عدالت نے پولیس کو بھی آئندہ سماعت پر دلائل دینے کا حکم دیتے ہوئے سماعت 12 ستمبر تک ملتوی کر دی۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

متعلقہ خبریں