بغاوت پر اکسانے کا مقدمہ، عدالت نے شہباز گل کی درخواست ضمانت مسترد کر دی

بغاوت پر اکسانے کا مقدمہ، عدالت نے شہباز گل کی درخواست ضمانت مسترد کر دی

شہباز گل کے خلاف بغاوت پر اکسانے کے مقدمہ میں عدالت نے محفوظ فیصلہ سنا دیا، عدالت نے شہباز گل کی درخواست ضمانت مسترد کر دی۔

اسلام آباد کی سیشن عدالت کے ایڈیشنل سیشن جج ظفر اقبال نے محفوظ فیصلہ سناتے ہوئے پی ٹی آئی رہنما شہباز گل کے خلاف بغاوت پر اکسانے کے مقدمے میں درخواست ضمانت مسترد کر دی۔

اسلام آباد کی مقامی عدالت میں پراسیکیوٹر راجہ رضوان عباسی نے دلائل دیتے ہوئے کہا کہ پاک آرمی کے افسران کے خلاف منظم طریقے سے ملزم نے بات کی اور ان کے الفاظ میں پاک فوج کے خلاف بغاوت کے لیے اکسایا گیا۔

رہنما پاکستان تحریک انصاف کے وکیل نے عدالت میں بغاوت کے الزامات کو مسترد کرتے ہوئے کہا کہ شہباز گل نے بغاوت کے متعلق کبھی سوچا ہی نہیں، ان کے انٹرویو کے ٹرانسکرپٹ کے مختلف جگہوں سے پوائنٹ اٹھا کر مقدمہ درج کیا گیا، کمرہ عدالت میں پی ٹی آئی رہنما شہباز گل کے متنازع بیان اور میزبان کے سوال کی ویڈیو بھی چلائی گئی۔

واضح رہے کہ شہبازگل کو 9 اگست کو گرفتار کیا گیا تھا، ان پر بغاوت پر اکسانے کا الزام عائد ہے اور ان کے خلاف تھانہ کوہسار پولیس نے سٹی مجسٹریٹ کی مدعیت میں مقدمہ درج کیا تھا۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

متعلقہ خبریں