پاکستان کا بھارت کے سپرسانک میزائل واقعہ کی تحقیقات بند کرنے کا فیصلہ مسترد

پاکستان کا بھارت کے سپرسانک میزائل واقعہ کی تحقیقات بند کرنے کا فیصلہ مسترد

پاکستان نے بھارت کی جانب سے سپرسانک میزائل واقعہ کی تحقیقات بند کرنے کے فیصلے کو مسترد کر دیا، پاکستان نے ایک بار پھر میزائل فائرنگ کی مشترکہ تحقیقات کا پرزور مطالبہ کر دیا۔

دفتر خارجہ کے ترجمان عاصم افتخار کا کہنا ہے کہ میزائل فائرنگ کے اقدام پرافسران کو سزائیں غیرتسلی بخش ہیں، بھارت پاکستان کے مشترکہ تحقیقات کے مطالبے کا جواب دینے میں ناکام رہا ہے، بھارت میزائل کمانڈ اینڈ کنٹرول نظام، اور سلامتی پروٹوکولز سے متعلق جواب دینے میں یکسر ناکام رہا ہے۔

ترجمان دفتر خارجہ کے مطابق بھارت ہتھیاروں کو سنبھالنے میں تکنیکی خامیوں کو انسانی غلطی تلے چھپا نہیں سکتا، بھارت کو شفافیت کے لیے میزائل واقعہ پر مشترکہ تحقیقات کا پاکستانی مطالبہ تسلیم کرنا چاہیے۔

انھوں نے مزید کہا کہ بھارت نے سپرسانک میزائل فائر کر کے خطے کے امن وسلامتی کو خطرے میں ڈال دیا تھا، پاکستان کا تحمل کا مظاہرہ ذمہ دار جوہری ریاست ہونے کا بیّن ثبوت ہے۔

یاد رہے کہ ہندوستان کی جانب سے پاکستانی علاقے میں رواں سال 9 مارچ کو سپرسانک میزائل فائرنگ کا واقعہ پیش آیا تھا۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

متعلقہ خبریں