شہباز گل کے ریمانڈ کی استدعا مسترد، پھر میڈیکل کرانے، پیر تک پمز میں رکھنے کا حکم

شہباز گل کے ریمانڈ کی استدعا مسترد، پھر میڈیکل کرانے، پیر تک پمز میں رکھنے کا حکم

شہباز گل کے جسمانی ریمانڈ کی استدعا مسترد کر دی گئی، عدالت نے شہباز گل کا دوبارہ میڈیکل کرانے، اور پیر تک پمز اسپتال میں رکھنے کا حکم صادر کر دیا۔

اسلام آباد کی عدالت نے پولیس کی جانب سے چیئرمین تحریک انصاف عمران خان کے چیف آف سٹاف شہباز گل کے 8 روزہ جسمانی ریمانڈ کی درخواست مسترد کر دی، عدالت نے انھیں پیر تک پمز ہسپتال رکھنے کا حکم دیا ہے۔

پی ٹی آئی رہنما شہباز گل کو پولیس نے سخت سیکورٹی میں اسپتال سے اسلام آباد کچہری منتقل کیا، جہاں شہباز گل نے عدالت میں بیان دیا کہ انھیں رات 2 بجے تک ٹیکے لگائے جاتے رہے، سانس لینے میں شدید دشواری کا سامنا ہے، انھوں نے خدا کا واسطہ دیتے ہوئے ماسک طلب کیا جس پر عدالت نے انھیں فوری طور پر آکسیجن ماسک فراہم کرنے کا حکم دیا۔

عدالتی کارروائی کے دوران پولیس نے پی ٹی آئی رہنما کے مزید 8 روزہ جسمانی ریمانڈ کی استدعا کی، پولیس پراسیکیوٹر کا کہنا تھا کہ قانون میں نہیں لکھا کہ بیمار شخص کا جسمانی ریمانڈ نہیں لیا جا سکتا، جس پر شہباز گل کے وکیل فیصل چودھری نے جسمانی ریمانڈ کی مخالفت کی۔

شہباز گل کے وکیل کا کہنا تھا کہ شہباز پر تشدد کیا گیا، میڈیکل رپورٹ سے بھی یہی محسوس ہوتا ہے، ان کا ریمانڈ دینا جان لیوا ہو گا۔

عدالت نے طرفین کے وکلاء کے دلائل سننے کے بعد فیصلہ محفوظ کر لیا، بعد ازاں جوڈیشل مجسٹریٹ راجہ فرخ علی خان نے محفوظ فیصلہ سناتے ہوئے جسمانی ریمانڈ کی استدعا مسترد کر دی، شہباز گل کے دوبارہ میڈیکل کرانے اور پیر تک اسپتال میں رکھنے کا حکم صادر کر دیا۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

متعلقہ خبریں