پی ٹی آئی قیادت اور کارکنوں پر تشدد کا الزام، عطا تارڑ کی حفاظتی ضمانت منظور

پی ٹی آئی قیادت اور کارکنوں پر تشدد کا الزام، عطا تارڑ کی حفاظتی ضمانت منظور

25 مئی کو پی ٹی آئی قیادت اور کارکنوں پر تشدد کے الزام پر اسلام آباد ہائیکورٹ نے عطا تارڑ کی 14 روزہ حفاظتی ضمانت منظور کر لی، اور پولیس کو لیگی رہنما کی گرفتاری سے روک دیا۔

قائم مقام چیف جسٹس اسلام آباد ہائیکورٹ جسٹس عامر فاروق نے عطا تارڑ کی درخواست پر فیصلہ سناتے ہوئے پولیس کو لیگی رہنما کو گرفتار کرنے سے روک دیا۔

واضح رہے کہ عطا تارڑ نے حفاظتی ضمانت کے لیے اسلام آباد ہائیکورٹ سے رجوع کرتے ہوئے مؤقف اختیار کیا تھا کہ میرے خلاف 25 مئی کو پی ٹی آئی کارکنان پر تشدد کا مقدمہ درج ہے، پولیس نے گرفتاری کے لیے رہائش گاہ پر چھاپہ مارا، حالانکہ میرے خلاف مقدمات محض تعصب اور سیاسی انتقام کی بنیاد پر ہیں۔

وزیراعظم کے معاون خصوصی نے عدالت سے استدعا کی کہ حفاظتی ضمانت منظور کی جائے، عطا تارڑ نے تھانہ قلعہ گجر سنگھ میں درج مقدمے میں حفاظتی ضمانت کی درخواست دائر کی تھی۔

اسلام آباد ہائیکورٹ نے عطا تارڑ کی درخواست پر فیصلہ سناتے ہوئے 14 روز کے لیے ان کی حفاظتی ضمانت منظور کر لی۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

متعلقہ خبریں