جنرل قاسم سلیمانی کا قتل، ڈونلڈ ٹرمپ کے وارنٹ گرفتاری جاری

تہران: (ویب ڈیسک) عراق کے دارالحکومت بغداد میں امریکا کے ہاتھوں قتل ہونے والے جنرل قاسم سلیمانی کے قتل پر ایران میں ڈونلڈ ٹرمپ کے وارنٹ گرفتاری جاری کر دیئے گئے۔ ٹرمپ کی حوالگی کے لیے انٹرپول ریڈ نوٹس کی درخواست دے دی۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کے مطابق تہران کے پراسیکیوٹر نے کہا ہے کہ بین الاقوامی پولیس کے ذریعے ڈونلڈ ٹرمپ سمیت 36 امریکی فوجی اور سیاسی عہدیداروں کے ساتھ ساتھ جنرل سلیمانی کے قتل میں ملوث دیگر ممالک سے تعلق رکھنے والے افراد کی گرفتاری اور ریڈ ڈیکلئیر کرنے کا حکم جاری کیا گیا ہے۔

ایرانی عدلیہ کے سربراہ علامہ سیّد ابراہیم رئیسی کی قیادت میں اجلاس کے دوران تہران کے پراسیکیوٹرعالی القاصی مہر نے جنرل سلیمانی کے قتل کیس سے متعلق کیے گئے اقدامات پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ بین الاقوامی پولیس کے ذریعے ڈونلڈ ٹرمپ سمیت 36 امریکی فوجی اور سیاسی عہدیداروں کے ساتھ ساتھ جنرل سلیمانی کے قتل میں ملوث دیگر ممالک سے تعلق رکھنے والے افراد کی گرفتاری اور ریڈ ڈیکلئیر کرنے کا حکم جاری کیا گیا ہے۔

انہوں نے اس افراد کے جرم کو قتل اور دہشتگردانہ اقدامات قرار دیتے ہوئے کہا کہ اس فہرست میں سرفہرست امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ ہیں اور ان کی مدت ملازمت ختم ہونے کے بعد بھی ان کیخلاف قانونی کارروائی کی جائے گی۔

یہ بات قابل ذکر ہے کہ 3 جنوری کو عراق کے دارالحکومت بغداد کے ایئرپورٹ پر امریکہ کی جانب سے راکٹ حملے کیے گئے جس کے نتیجے میں پاسداران انقلاب کے کمانڈر قدس جنرل قاسم سلیمانی سمیت عراق کی عوامی رضاکار فورس الحشد الشعبی کے ڈپٹی کمانڈر ابومهدی المهندس بھی مارے گئے تھے۔