سعودی عرب میں کل تمام مساجد میں جمعہ کا خطبہ کورونا ویکسین اور احتیاطی تدابیر پر دیا جائے گا

سعودی حکام کی جانب سے بتایا گیا ہے کہ کل کے روز مملکت بھر میں نماز جمعہ کے خطبات میں کورونا پر بات کی جائے گی جس میں کورونا ویکسین لگوانے کی افادیت اور اس کے بارے میں کیے جانے والے منفی پراپیگنڈے کا پردہ چاک کیا جائے گا۔ اس کے علاوہ ماسک لگانے، سماجی فاصلے کی بھی تاکید کی جائے گی۔ نماز جمعہ سے قبل کے خطبات میں لوگوں سے کہا جائے گا کہ وہ ویکسین کے حوالے سے منفی پراپیگنڈے کا شکار نہ ہوں، اور اس معاملے میں صرف مستند ذرائع پر اعتبار کریں ، غلط خبروں پر ہرگز کان نہ دھریں۔

سعودی وزارت اسلامی امور و تبلیغ کی جانب سے مملکت کی تمام مساجد کو جمعے کے خطبے میں کورونا ویکسین کی افادیت پر بات کرنے کے لیے سرکلر جاری کر دیا گیا ہے۔واضح رہے کہ سعودی عرب کی نوجوان نسل شہزادہ محمد بن سلمان سے خاص اُنسیت اور لگاؤ رکھتی ہے اور انہیں سعودی تاریخ کا اہم رہنما مانتی ہے۔ شہزادہ محمد بن سلمان کے سعودی عرب پرگہرے اثرات کا اندازہ اس ایک بات سے لگایا جا سکتا ہے کہ اب تک سعودی عوام کی بڑی گنتی کورونا ویکسین لگوانے سے گھبرا رہی تھی، تاہم میڈیا پر ولی عہد کی ویکسین لگوانے کی تصویریں اور ویڈیو سامنے آئیں۔

سعودی عوام نے بھی بلاجھجک ویکسین لگوانے کا فیصلہ کر لیا۔چند گھنٹوں کے اندر ویکسین کے لیے رجسٹریشن کروانے والوں کی گنتی میں ریکارڈ اضافہ ہو گیا۔ سعودی وزیر صحت ڈاکٹر توفیق الربیعہ کے مطابق ولی عہد کے ویکسین لگوانے کی دیر تھی، جس کے بعد ویکسی نیشن کی رجسٹریشن میں یکایک پانچ گنا اضافہ ہو گیا ہے۔ جبکہ ویکسین لگوانے والوں کی گنتی میں بھی تین گنا اضافہ ہو چکا ہے۔

ڈاکٹر توفیق نے ولی عہد کی طرف سے ملک میں کرونا وبا پر قابو پانے کی کوششوں اور ویکسینوں کی فراہمی میں دلچسپی کا مظاہرہ کرنے پر ان کا خصوصی شکریہ ادا کیا۔ ولی عہد نے جمعہ کی شام کو کورونا سے بچاؤ کی ویکسین لگائی گئی تھی۔ ویکسین لگوائے جانے کی ایک تصویر اور ویڈیو بھی سوشل میڈیا پر وائرل ہوئی تھی جس پر لوگوں کی جانب سے بے حد خوشی کا اظہار کیا گیا تھا۔