کراچی: ڈیفنس فیز 4 کے بنگلہ مالکان نے پولیس مقابلے کو جعلی قرار دیدیا

کراچی کے علاقے ڈیفنس فیز 4 کے بنگلہ مالکان نےگزشتہ روز ہونے والے پولیس مقابلے کو جعلی قرار دے دیا۔

گزشتہ روز پولیس نے دعویٰ کیا تھا کہ مقابلے میں 5 ملزمان مارے گئے ہیں، مبینہ پولیس مقابلے میں مارے جانے والے 5 ڈاکوؤں میں ایک گھر کا ڈرائیور بھی شامل تھا جس کی مالکن واقعہ کے خلاف گزری تھانے پہنچ گئی۔

لیلیٰ پروین نے گزری تھانے کے باہر گفتگو میں کہا کہ پولیس نے ان کی ساس اور نند کو نامعلوم مقام پر منتقل کیا اور ڈرائیور محمد عباس کو اغوا کر کے قتل کر دیا، ڈرائیور کا دہشت گردوں سے کوئی تعلق نہیں تھا، پولیس متضاد بیانات دے رہی ہے۔کراچی کے علاقے ڈیفنس فیز 4 میں مبینہ پولیس مقابلہ، 5 ملزمان ہلاکلیلیٰ پروین کے شوہر علی حسنین ایڈووکیٹ نے وزیر اعظم عمران خان سے واقعہ کا نوٹس لینے کی اپیل کرتے ہوئے کہا کہ اگر کسی کا کرمنل ریکارڈ ہے تو اسے عدالت میں پیش کرنا چاہیے، ان کے ڈرائیور کو ماورائے عدالت قتل کیا گیا جب کہ واقعہ کا کوئی عینی شاہد نہیں ہے۔دوسری جانب پولیس کا کہنا ہے کہ لیلیٰ پروین اور ان کے شوہر نے ابھی تک مقدمہ درج کرنے کی کوئی درخواست نہیں دی۔ پولیس حکام کا دعویٰ ہے کہ مارے گئے ڈرائيور کا دہشت گردوں سے رابطہ تھا جب کہ گینگ کے سرغنہ غلام مصطفیٰ اور محمد عباس کا کال ڈیٹا اور ریکارڈنگ بھی موجود ہے اور دونوں کے درمیان 17 مرتبہ ٹیلی فونک رابطہ ہوا ہے۔