نواز اور شہباز شریف کی والدہ بیگم شمیم اختر سپرد خاک

لاہور میں نواز شریف اور شہباز شریف کی والدہ بیگم شمیم اختر کو سپرد خاک کردیا گیا۔

لاہور میں ہونے والی نماز جنازہ میں شریف خاندان کے افراد ، سیاسی شخصیات اور بڑی تعداد میں شہریوں نے شرکت کی۔ نواز شریف اور شہباز شریف کی والدہ کا 22 نومبر کو لندن میں انتقال ہوا تھا۔نواز شریف کی ہمشیرہ کوثر بیگم بھی علی الصبح میت کے ساتھ لاہور پہنچیں تھیں جب کہ قائد حزب اختلاف شہباز شریف اور حمزہ شہباز نے لاہور ائیر پورٹ پر بیگم شمیم اختر کی میت وصول کی جسے شریف میڈیکل کمپلیکس جاتی عمرہ پہنچایا گیا۔

بیگم شمیم اختر کی نماز جنازہ شریف جاتی عمرہ میں ادا کی گئی جس میں شہباز شریف، حمزہ شہباز اور مسلم لیگ ن کی مرکزی قیادت کے علاوہ بڑی تعداد میں عوام نے شرکت کی۔ بیگم شمیم اختر کی نماز جنازہ مفتی راغب نعیمی نے پڑھائی اور ان کی تدفین شوہر میاں محمد شریف کے پہلو میں کی گئی۔بیگم شمیم اختر کی نماز جنازہ گزشتہ روز لندن کی مرکزی مسجد میں بھی ادا کی گئی تھی، کورونا ایس او پیز کے تحت نماز جنازہ میں 30 افراد کے شریک ہونے کی اجازت تھی، لندن میں بیگم شمیم اختر کی نماز جنازہ میں نوازشریف، حسین نواز، حسن نواز، اسحاق ڈار، ان کے بیٹے علی ڈار اور قریبی عزیز شریک ہوئے تھے۔واضح رہے کہ حکومت پنجاب نے والدہ کی نماز جنازہ اور تدفین میں شرکت کے لیے گزشتہ روز شہباز شریف اور حمزہ شہباز کو 5 روزہ پیرول پر سینٹرل جیل کوٹ لکھپت سے رہا کیا تھا۔ پیرول قواعد کے تحت شہباز شریف اور حمزہ شہباز کی رہائش گاہ سب جیل قرار دی گئی ہے اور جیل کا عملہ اُن کے ساتھ رہے گا۔