اللہ کی قدرت، سعودی عرب کے پہاڑوں پر کافی کے سینکڑوں درخت اُگ آئے

سعودی عرب پر اللہ کی قدرت سے کافی کے درخت خود بخود اُگنے لگے ہیں۔ سعودی عرب کی جنوب مغربی علاقے جازان میں گورنری ‘الریث’ کے پہاڑوں میں جہاں دیگر پھل دار پودے پائے جاتے ہیں وہاں پر کافی کا خود رو باغ بھی موجود ہے جو خود ہی پھلتا پھولتا ہے اور لوگ اس سے فائدہ اٹھاتے ہیں۔العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق جبل ‘القھر’ میں انسانی مداخلت سے دور کافی کے درخت خود بہ خود اگتے جاتے ہیں۔

مقامی سطح پر کافی کے اس درخت کو ‘الخولانی کافی’ کہا جاتا ہے۔ یہاں پر خود رو اگلنے والے کافی کے پودوں کو وہاں سے نکال کر ملک کے دوسرے علاقوں پر بھی لگائے جاتے ہیں۔ایک مقامی کاشت کار مسرع الریثی نے العربیہ ڈاٹ نیٹ سے بات کرتے ہوئے کہا کہ جوانی کی عمر میں وہ علاقے سے باہر ملازمت کے لیے گئے۔گاؤں واپسی کے بعد دو سال قبل میرے والد نے مجھے کافی کے اس خود رو باغ کے بارے میں بتایا۔

والد نے بتایا کہ یہاں پر کافی کے صرف پانچ پودے بچ گئے تھے۔ میں نے انہیں کاٹ دیا اور ان کی جڑوں سے مزید پودے نکل آئے اور اب یہاں پر 70 درخت ہیں۔انہوں نے کہا کہ مقامی سطح پر خود رو طریقے سے پروان چڑھنے والے کافی کے درخت کو ‘پہاڑی کافی’ بھی کہا جاتا ہے۔ کافی کے یہ درخت زمانہ قدیم سے جہاں پر اگتے چلے آرہے ہیں۔ ان کے آباؤ اجداد نے بھی ان کے بارے میں انہیں بتایا۔ ان کا کہنا تھا کہ اطراف کی وادیوں اور گھاٹیوں سے بہنے والی زرخیز مٹی چٹانوں پر بیٹھتی رہی اور یہاں پر کافی کے درخت اگتے اور خود ہی پھیلتے رہے۔