امارات میں والد اور 18 سالہ بیٹی سمند رمیں ڈوب گئے

شارجہ کے ساحل الہیرا بیچ پر ایک افسوس ناک واقعے کے نتیجے میں بھارتی شخص اپنی 18 سالہ بیٹی سمیت سمندر میں ڈوب کر جاں بحق ہو گیا ہے۔ گلف نیو زکے مطابق کیرالہ کے رہائشی47 سالہ اسماعیل تھازی چندم کدیئی اپنی بیوی بیٹیوں اور دیگر رشتہ داروں کے ہمراہ تفریح کے لیے ساحل پرموجود تھا۔چھوٹے بچوں والدین کی نگرانی میں ہی ساحل پر کھیل رہے تھے جبکہ اس کی بیٹیاں اور بھائی کے بچے گہرے پانی میں چلے گئے ۔
جب اسماعیل نے بچوں کی جان خطرے میں دیکھی تو وہ ان کو بچانے کے لیے گہرے پانی میں چلا گیا۔ اس نے بڑی مشکل سے چار بچوں کی جان بچا لی مگر اپنی 18 سالہ بیٹی امل کو بچانے میں کامیاب نہ ہو سکا۔ دونوں باپ بیٹی سمندر کی اونچی لہروں میں بہہ کر اللہ کو پیارے ہو گئے۔

یہ واقعہ شام ساڑھے چار بجے پیش آیا۔ اسماعیل تھازی کے ایک رشتہ دار نے بتایا کہ یہ بدقسمت خاندان تفریح کے لیے عجمان اور شارجہ کی سرحد پر واقع ساحلی علاقے میں آیا تھا۔جب دونوں باپ بیٹی سمندر سے واپس ساحل کی طرف نہ آ سکے تو پولیس کو اطلاع دی گئی، جس نے بدنصیب باپ بیٹی کی تلاش شروع کر دی۔ بالآخر آدھ گھنٹے بعد ان کی لاشیں سمندر کی سطح پر وہی اُبھر آئیں، جہاں وہ ڈوب گئے تھے۔ اس واقعے پر پورا خاندان اور ان کے اہل و احباب صدمے اوردُکھ کا شکار ہیں۔ اسماعیل کئی سالوں سے دُبئی میں مقیم تھا اورروڈزاینڈ ٹرانسپورٹ اتھارٹی کا ملازم تھا۔ جس نے اپنی بیوی بچوں کو تین ماہ کی تعطیلات پر دُبئی بُلایا تھا۔ مگر ان کا یہ تفریحی پروگرام زندگی بھر کے بڑے صدمے کا باعث بن گیا۔ اسماعیل کے لواحقین میں بیوی کے علاوہ دو بیٹیاں شامل ہیں جن کی عمریں 8 سال اور 14 سال ہیں۔