ایران نے اپنے 3 قیدیوں کے بدلے آسٹریلوی خاتون ماہر تعلیم کو رہا کردیا

تہران: ایران نے برطانوی نژاد آسٹریلوی خاتون ماہر تعلیم مور گلبرٹ کو رہا کر دیا تاہم اس کے بدلے تھائی لینڈ نے 3 ایرانی قیدیوں کو رہا کیا۔عالمی خبر رساں ادارے کے مطابق ایران میں جاسوسی کے الزام میں دو سال سے قید میلبورن یونیورسٹی سے وابستہ خاتون ماہر تعلیم مور گلبرٹ کو جیل سے رہائی کا پروانہ مل گیا ہے۔ مور گلبرٹ کو 2018 میں گرفتار کر کے بند کمرے میں مقدمہ چلا گیا تھا اور جاسوسی کے الزام میں 10 سال قید کی سزا سنائی گئی تھی۔

ماہر تعلیم مور گلبرٹ کی رہائی سے قبل تھائی لینڈ نے اسرائیلی سفارت کاروں پر 2012 میں ناکام بم حملے کے الزام میں قید 3 ایرانی شہریوں کو اُن کے ملک کے حوالے کردیا تھا تاہم تھائی لینڈ نے اس عمل کو ’قیدیوں کے تبادلے‘ سے تعبیر کرنے کو درست قرار نہیں دیا۔ ایرانی شہریوں کو تھائی لینڈ میں اسرائیلی سفارت کاروں پر بم دھماکے کے الزام میں 2012 میں سزا ہوئی تھی

ایرانی شہریوں کو تھائی لینڈ میں اسرائیلی سفارت کاروں پر بم دھماکے کے الزام میں 2012 میں سزا ہوئی تھی ‘‘دوسری جانب ایران کے سرکاری میڈیا کا دعویٰ ہے کہ خاتون ماہر تعلیم کو غیر ممالک میں قید 3 ایرانی شہریوں کی رہائی کے بدلے چھوڑا گیا۔ 3 میں سے ایک ایرانی شہری تاجر ہیں اور وہ اپنے بزنس کے سلسلے میں تھائی لینڈ گئے تھے۔