ریاض ریستوران کیس: تارکین اورسعودیوں پر چار لاکھ ریال جرمانہ

وزارت تجارت نے فاسٹ فوڈ ریستوران کیس میں تین سعودی شہریوں اور دو مقیم غیرملکیوں پر چار لاکھ ریال کا جرمانہ کردیا- وزارت تجارت نے مصر کے دو شہریوں احمد سلیمان اور ہشام السید کو اپنے نام سے فاسٹ فوڈ ریستوران کھلوانے والے مقامی شہری عبداللطیف الشدوخی، محمد الحبیب اور محمد بانافع کو قانون تجارت کا مجرم قرار دے دیا- سعودی قانون تجارت کے مطابق کوئی بھی مقامی شہری اپنے نام سے کسی بھی غیرملکی کو کسی بھی قسم کا کاروبار کرانے کا مجاز نہیں- اسی طرح غیرملکی بھی سعودیوں کے نام سے قانونا اپنا کاروبار نہیں کرسکتے-

وزارت تجارت نے مصر کے دو شہریوں احمد سلیمان اور ہشام السید کو اپنے نام سے فاسٹ فوڈ ریستوران کھلوانے والے مقامی شہری عبداللطیف الشدوخی، محمد الحبیب اور محمد بانافع کو قانون تجارت کا مجرم قرار دے دیا- سعودی قانون تجارت کے مطابق کوئی بھی مقامی شہری اپنے نام سے کسی بھی غیرملکی کو کسی بھی قسم کا کاروبار کرانے کا مجاز نہیں- اسی طرح غیرملکی بھی سعودیوں کے نام سے قانونا اپنا کاروبار نہیں کرسکتے-

وزارت تجارت نے پورا کیس ریاض میں فوجداری کی عدالت بھیج دیا تھا- جس نے کاروبار کرنے اور کرانے والے دونوں فریقوں پر چار لاکھ ریال کا جرمانہ کردیا- عدالت نے ریستوران بند کرنے کا حکم بھی دے دیا جبکہ ریستوران کا لائسنس منسوخ کردیا- سجل تجاری (تجارتی رجسٹریشن) ختم کردیا آئندہ سعودی شہریوں کو فاسٹ فوڈ ریستوران کھولنے پر پابندی لگادی جبکہ انہیں زکوۃ، ٹیکس اور فیس کی ادائیگی کا بھی حکم دے دیا-