بچوں کو جسمانی سزا دینے کی ممانعت سے متعلق بل قومی اسمبلی میں منظور

اسلام آباد میں بچوں کو جسمانی سزا دینے کی ممانعت کے احکام واضح کرنے کا بل قومی اسمبلی میں منظور کرلیا گیا۔
مسلم لیگ ن کی رکن مہناز اکبر عزیز نے بل ایوان میں پیش کیا۔ اس حوالے سے وزیر انسانی حقوق شیریں مزاری نے کہا کہ ہمیں اس بل پر کوئی اعتراض نہیں ہے۔ بل میں حکومت کی جانب سے پیش کردہ ترمیم بھی شامل کی گئی۔

شیریں مزاری نے بتایا کہ اس ترمیم کا فائدہ یہ ہوگا کہ شکایت عدالت میں درج کی جا سکےگی، پہلے بل میں کہا گیا تھا کہ شکایت حکومت کی قائم کردہ کمیٹی میں کی جا سکے گی، بل میں ترمیم کی ہے شکایت براہ راست عدالت میں کی جا سکے گی۔

اس حوالے سے معروف گلوکار اور سماجی کارکن شہزاد رائے کا کہنا ہے کہ بہت اچھی بات ہے بل کو حکومت اوراپوزیشن نے مل کرمنظور کرایا، دو دن پہلے اسد قیصر اور شیریں مزاری سے بھی ملاقات کی تھی، بچوں کی سب سے پہلے پٹائی گھرمیں ہوتی ہے، گھرکے بعد اسکول میں بچے کی پٹائی ہوتی ہے۔