اسلام آباد اور صوبوں کو کورونا ویکسین کی دوسری کھیپ کی فراہمی مؤخر

وفاقی حکام نے صوبوں اور اسلام آباد کو کورونا ویکسین کی دوسری کھیپ کی فراہمی مؤخر کر دی۔
حکام کا کہنا ہے کہ اسلام آباد اور صوبوں کو فرنٹ لائن ورکرز کے لیے 1 لاکھ 90 ہزار خوراک دو ہفتے پہلے دی گئی ہیں۔

وفاقی حکام کا کہنا ہے کہ کل رات تک ملک میں صرف 60 ہزار فرنٹ لائن ہیلتھ کیئر ورکرز کو سائنوفارم ویکسین لگ سکی، صوبوں کے پاس اب بھی 1 لاکھ 30 ہزار سے زائد ویکسین کی ڈوزز موجود ہیں۔ حکام کے مطابق ملک میں فرنٹ لائن ہیلتھ کیئر ورکرز کی تعداد 4 لاکھ 92 ہزار سے زائد ہے لیکن صرف ایک لاکھ فرنٹ لائن ہیلتھ کیئر ورکرز نے خود کو ویکسی نیشن کے لیے رجسٹر کروایا۔

وفاقی حکام کا کہنا ہے کہ سندھ کو دی گئی 83 ہزار ڈوزز میں سے صرف 35 ہزار استعمال ہوئیں، پنجاب کو دی گئی 70 ہزار ڈوزز میں سے اب تک 20 ہزار استعمال ہوئیں۔ حکام کے مطابق فرنٹ لائن ہیلتھ کیئر ورکرز کے لیے 1 لاکھ 90 ہزار ویکسین ڈوزز کی دوسری کھیپ موجود ہے، فرنٹ لائن ہیلتھ کیئر ورکرز کے لیے آرمی کی عطیہ کی گئی 2 لاکھ ڈوزز بھی موجود ہیں۔

حکام کا کہنا ہے کہ ویکسین بہت قیمتی ہے جب تک پہلی ڈوز سب کو نہیں لگتی، دوسری جاری نہیں کریں گے۔