سعودی عرب نے تیل پیدا کرنے والے ممالک کو خبردار کردیا

ریاض: سعودی عرب نے تیل پیدا کرنے والے ممالک کو خبردار کرتے ہوئے کہا ہے کہ بہتر ہوگا کہ ہم لچکدار پالیسی اپنائے رکھیں اور ہر طرح کی صورتحال سے نمٹنے کے لیے زیادہ سے زیادہ تیار رہیں۔

سعودی وزیر توانائی شہزادہ عبدالعزیز بن سلمان کا کہنا ہے کہ تیل پیدا کرنے والے ممالک کو مسلسل محتاط رہنا پڑے گا۔ وزیر توانائی نے کہا کہ ابھی کرونا وائرس وبا کے خلاف کامیابی کا اعلان قبل از وقت ہوگا۔

انہوں نے کہا کہ تیل پیدا کرنے والے ممالک کو انتہائی محتاط رہنا ہوگا، لاپرواہی سے پرہیز اور بہت زیادہ خوش فہمی میں مبتلا ہونے سے بچنا ہوگا۔

شہزادہ عبد العزیز بن سلمان کا کہنا تھا کہ اوپیک پلس میں شامل ممالک کی جانب سے پیداواری کوٹے میں تبدیلی کی بدولت کووڈ 19 وبا کی شدت میں کمی واقع ہوئی ہے، اس کی بدولت تیل منڈی مستحکم رہی اور توانائی کے شعبے میں امن و امان کا ماحول مضبوط ہوا ہے۔
یہ بھی پڑھیں: سعودی دارالحکومت کا مشہور شاپنگ مال سیل

انہوں نے کہا کہ ہم نے کرونا وبا سے متعدد سبق سیکھے ہیں، ان میں سے ایک یہ ہے کہ مستقبل کے بارے میں قیاس آرائی مفید نہیں۔ مستقبل قریب کے بارے میں بھی پیش گوئی کرنا درست نہیں۔

وزیر توانائی کا کہنا تھا کہ بہتر یہ ہوگا کہ ہم لچکدار پالیسی اپنائے رکھیں اور ہر طرح کی صورتحال سے نمٹنے کے لیے زیادہ سے زیادہ تیار رہیں، اس بات کو ہمیشہ مدنظر رکھیں کہ مشترکہ جدوجہد ہی مستقبل کے چیلنجوں سے نمٹنے کا مثالی راستہ ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ کرونا وبا کے خطرات کا احاطہ کر کے انہیں تسخیر کیا جا سکتا ہے، اس کے لیے ہمیں زیادہ سے زیادہ مکالمے، توانائی کے گوشواروں میں شفافیت اور ایک دوسرے کا دست و بازو بننا ہوگا۔ یہی توانائی کے عالمی فورم کا بنیادی ہدف اور مشن بھی ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ سعودی عرب نے جی 20 کی قیادت کے دوران توانائی ورکنگ ٹیموں کے ذریعے اس مشن کے لیے بڑھ چڑھ کر کام کیا تھا۔