سال 2020: کرونا وبا کے باوجود چین نے تجارت میں امریکا کو پیچھے چھوڑ دیا

بیجنگ: سال 2020 کے دوران کرونا وائرس کی وبا کے باوجود چین یورپی یونین کا اہم تجارتی شراکت دار رہا اور امریکا کو پیچھے چھوڑ دیا۔

یورپی یونین کے بیورو آف شماریات کی جانب سے جاری کردہ اعداد و شمار کے مطابق سنہ 2020 میں کووڈ 19 وبا کے باوجود یورپی یونین کے 27 ممالک اور چین کے درمیان دو طرفہ تجارت میں اضافہ ریکارڈ کیا گیا۔اس دوران چین پہلی بار امریکا کو پیچھے چھوڑتے ہوئے یورپی یونین کا سب سے بڑا تجارتی شراکت دار بن گیا۔

سنہ 2020 میں یورپی یونین نے چین سے 3 کھرب 83 ارب 50 کروڑ یورو مالیت کا سامان درآمد کیا، جو پچھلے برس کے مقابلے میں 5.6 فیصد زیادہ ہے۔

یورپی یونین نے چین کو 2 کھرب 2 ارب 50 کروڑ یورو مالیت کی اشیا برآمد کیں جو پچھلے سال کے مقابلے میں 2۔2 فیصد زیادہ ہے۔دوسری طرف یورپی یونین اور امریکا کے مابین دو طرفہ تجارت میں کمی واقع ہوئی۔

سنہ 2020 میں یورپی یونین نے امریکا سے 2 کھرب 2 ارب یورو سامان درآمد کیا جو گزشتہ برس کے مقابلے میں 13.2 فیصد کم ہے۔ایورپی یونین نے امریکا کو 3 کھرب 53 ارب یورو مالیت کا سامان برآمد کیا جو گزشتہ برس کے مقابلے میں 8.2 فیصد کم ہے۔