آنگ سان سُوچی کیس کی عدالتی سماعت کیسے ہوگی؟

نیپی تا : میانمار کی گرفتار رہنما آنگ سان سُوچی کیخلاف مقدمے کی سماعت ویڈیو لنک کے ذرئعے کی جائے گی، ان کی گرفتاری کی مدت بھی بڑھا دی گئی ہے۔

میانمار کی برطرف رہنما آنگ سان سُوچی کی عدالتی سماعت وڈیو لنک کے ذریعے جلد منعقد ہوگی۔ انہیں پہلی فروری کو فوجی بغاوت کے موقع پر حراست میں لے لیا گیا تھا۔

جج کو پیش کردہ پولیس دستاویزات کے مطابق شبہ ہے کہ انہوں نے واکی ٹاکی ریڈیو غیر قانونی طور پر درآمد کیے اور انہیں بلا اجازت استعمال کیا تھا۔

آنگ سان سوچی کی حراست کی میعاد گزشتہ روز پیر کو ختم ہونے والی تھی لیکن ایک جج نے ان کے وکیل کھِن ماؤنگ زو کو بتایا کہ ان کی حراست میں بدھ کے روز تک توسیع کی جائے گی۔

اس وکیل کو یہ بھی بتایا گیا کہ توقع ہے کہ سماعت چند دنوں کے اندر وڈیو کانفرنس کے ذریعے ہوگی۔

مذکورہ وکیل نے یہ بات زور دے کر کہی کہ اگر آنگ سان سوچی نے وکیل کی خدمات لینے کا اپنا ارادہ واضح کر دیا تو انہیں وکیل سے ملنے کی اجازت ہوگی۔

آن سان سوچی کو حراست میں لیےجانے کے بعد سے انہیں عوام میں نہیں دیکھا گیا، مذکورہ وکیل کا کہنا تھا کہ وہ ان سے بات چیت کرنا چاہتے ہیں۔

واضح رہے کہ اقوام متحدہ سلامتی کونسل نے فوجی حراست میں لی گئی میانما کی رہنما آنگ سان سُوچی اور دیگر افراد کو رہا کئے جانے کی اپیل کی ہے۔

سلامتی کونسل نے ملک میں ایمرجنسی کے نفاذ پر بھی تشویش کا اظہار کیا ہے۔ اقوام متحدہ کی 15 رُکنی سلامتی کونسل نے اتفاق رائے سے جاری اپنے بیان میں جمہوری اداروں اورطریقہ عمل کو سربلند رکھنے تشدد سے گریز اور انسانی حقوق کا مکمل احترام کرنے بنیادی آزادی اور قانون کی بالادستی کو قائم رکھنے کی ضرورت پر زور دیا ہے۔