اپوزیشن پرانا پاکستان چاہتی ہے جہاں ضمیر بیچے جاتے تھے: شبلی فراز

پشاور: وفاقی وزیر اطلاعات و نشریات سینیٹر شبلی فراز کا کہنا ہے کہ اپوزیشن پرانا پاکستان چاہتی ہے جہاں ضمیر بیچے جاتے ہیں۔ پشاور میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے وفاقی وزیر اطلاعات شبلی فراز کا کہنا تھا کہ پاکستان تحریک انصاف سینیٹ الیکشن میں شفافیت کو عملی جامہ پہنانے کی کوشش کر رہی ہے، لیکن اپوزیشن کی جانب سے سینیٹ الیکشن کی شفافیت پر مخالفت سمجھ سے باہر ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ ماضی میں ہمیشہ ہر الیکشن پر انگلیاں اٹھائی گئی ہیں، ایک ایسا نظام تشکیل دینا چاہتے ہیں کہ سینیٹ کے انتخابات کے بعد کوئی انگلی نہ اٹھا سکے۔ انہوں نے کہا کہ شاید اپوزیشن انتخابات میں پیسے کے کلچر کو ختم نہیں کرنا چاہتی، مجھے سینیٹ الیکشن کے لیے وزیراعظم نے دوسری بار ٹکٹ دیا جو اعزاز ہے۔

شبلی فراز کا کہنا تھا کہ اپوزیشن چاہتی ہے کہ تمام چیزیں پرانے پاکستان کی بنیاد پر ہوں، پرانے پاکستان میں لوگوں کو خریدا جاتا تھا اور اپوزیشن یہی چاہتی ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ ماضی میں ہمیں قانون سازی سے متعلق مشکلات کا سامنا رہا، سینیٹ میں ہماری اکثریت سے قانون سازی میں درپیش رکاوٹیں دور ہو جائیں گی۔

انہوں نے کہا کہ پاکستان میں پیسے کا کلچر ختم ہوگا تو عام لوگوں کو عوام کی خدمت کا موقع ملے گا، اپوزیشن پرانا پاکستان چاہتی ہے جہاں ضمیر بیچے جاتے ہیں، یقین ہے پی ٹی آئی کے اراکین پارٹی کے نامزد امیدواروں کو ووٹ دیں گے۔ وفاقی وزیر اطلاعات نے کہا کہ وزیراعظم سینیٹ انتخابات میں ووٹ کی خرید و فروخت کو ختم کرنے کے لیے پرعزم ہیں۔