ن لیگ رہنما عطا تارڑ آدھے گھنٹے بعد ہی رہا

پنجاب پولیس نے مسلم لیگ ن کے جنرل سیکرٹری عطااللہ تارڑ کو گرفتاری کے آدھے گھنٹے بعد ہی رہا کر دیا۔عطا تارڑ کو کچھ دیر قبل ڈسکہ سے گرفتار کیا گیا تھا اور انہیں پولیس موبائل میں بٹھا کر تھانے لے جایا گیا۔ ‏میڈیا پر گرفتاری کی خبریں بریکنگ نیوز کے طور پر نشر ہوئیں۔

پولیس نے گرفتاری کی کوئی وجہ نہیں بتائی اور تھوڑی دیر بعد انہیں رہا کر دیا گیا۔ سائرہ افضل تارڑ نے میڈیا ‏کو بتایا کہ عطااللہ کو تارڑ کو رہا کر دیا گیا ہے۔

ترجمان مسلم لیگ ن مریم اورنگزیب نے اے آر وائی نیوز سے گفتگو کرتے ہوئے کہاکہ عطااللہ تارڑ ضمنی ‏الیکشن کی مہم کیلئےڈسکہ میں موجود تھے، عطااللہ تارڑکےخلاف کوئی کیس،کوئی ریفرنس نہیں اور وہ انتخابی ‏مہم چلارہےتھے۔

انہوں نے کہا کہ گرفتاری ثبوت ہے کہ حکومت کو عوام نے مستردکردیا، پنجاب حکومت ضمنی الیکشن میں ‏ناکامی سے خوفزہ ہے میں سمجھتی ہوں پنجاب پولیس نے عطاتارڑ کو اغواکیاہے بغیر اریسٹ وارنٹ عطاتارڑ کو ‏گرفتار کیا گیا۔