حلیم عادل شیخ کا سندھ حکومت پر انتقامی کارروائی کا الزام

پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے رہنما حلیم عادل شیخ نے فارم ہاؤس گرانے کو سندھ حکومت کی انتقامی کارروائی قرار دیدیا۔ حلیم عادل شیخ نے کہا کہ ان کا فارم ہاؤس نہیں بلکہ حلیم عادل شیخ کو ڈی مولش کیا گیا، میمن گوٹھ اور گڈاپ میں فارم ہاوسز مسمار کیے جانے پر ان کے چوکیداروں کی جانب سے وزیر اعلیٰ سندھ کے خلاف مقدمے کی درخواست کی گئی ہے۔

ان کا کہنا تھا کہا گیا ہے کہ طارق دھاریجو نامی شخص فارم ہاؤس پر 60، 70 افراد کے ساتھ آیا اور پوچھا یہ فارم ہاؤس حلیم عادل شیخ کا ہے؟ اسے بتایا گیا کہ یہ ان کے کزن طارق قریشی کا ہے تو طارق دھاریجو نے کسی کو سی ایم صاحب مخاطب کر کے کہا یہ ان کے کزن کا ہے، پھر بولا فارم ہاؤس مسمار کرو۔

حلیم عادل شیخ نے بتایا کہ اس شخص (طارق دھاریجو) نے کہا کہ سامان لوٹ لو، اس نے اسٹے آڈر بھی پھاڑ ڈالا اور پانچ بکریاں بھی چرا لیں۔ خیال رہے کہ گزشتہ روز اینٹی انکروچمنٹ نے ملیر میں سرکاری زمین واگزارکرانے کے لیے پی ٹی آئی رہنما حلیم عادل شیخ کا خاندانی فارم ہاؤس بلڈوز کیا تھا۔