سفارتخانہ پاکستان الریاض کا  "یوم حق خود ارادیت ” کے عنوان پر ایک میڈیا بریفنگ کا انعقاد۔

ریاض:(ملک ندیم شیر) "یوم حق خود ارادیت” کی اہمیت کو اجاگر کرنے کے لئے ، سفارت خانہ پاکستان نے 7 جنوری 2021 ءکو ایک میڈیا بریفنگ کا اہتمام کیا۔ اس کا مقصد اقوام متحدہ کے کمیشن برائے ہندوستان اور پاکستان  (UNCIP) کی طرف سے 5 جنوری 1949 ء کو منظور کی گئی تاریخی قرار داد کے بارے میں عالمی برادری کو احساس دلانا تھا ، جو کشمیری عوام کے حق خودارادیت پر روشنی ڈالتی ہے۔

قرارداد میں اس بات کی نشاندہی کی گئی ہے کہ ریاست جموں و کشمیر کے الحاق کے سوال کا فیصلہ اقوام متحدہ کے زیراہتمام ایک آزادانہ ، منصفانہ اور غیر جانبدارانہ رائے شماری کے ذریعے کیا جائے گا۔

سفیر راجہ علی اعجاز نے میڈیا اہلکاروں کو بریفنگ دیتے ہوئے کشمیری عوام کی حق خودارادیت کی جدوجہد میں ان کی قربانیوں کو بھرپور خراج تحسین پیش کیا۔ انہوں نے ہندوستانی غیر قانونی طور پر مقبوضہ جموں و کشمیر (IIOJ & K) میں انسانی حقوق کی سنگین صورتحال پر روشنی ڈالی۔ سفیر نے ہندوستان سے مطالبہ کیا کہ وہ گذشتہ سات دہائیوں سے ان بے گناہ کشمیریوں پر ظلم برپا کرنے سے باز آجائے جو اس کے غیر قانونی قبضے میں ہیں۔ انہوں نے مطالبہ کیا کہ ہندوستان فوری طور پر اپنے فوجی محاصرے کو ختم کرے

آبادیاتی تبدیلی کی اپنی پالیسی کو  واپس لے، جبری قوانین کو ختم کرے ، بنیادی انسانی حقوق کی بحالی کرے ، تمام قیدیوں کو آزاد کرے ، آزادانہ نقل و حرکت اور مواصلات سے تمام پابندیاں اٹھائے ، اور زمینی صورتحال کا مشاہدہ کرنے کے لئے اقوام متحدہ ، غیر ملکی میڈیا کے آزاد نمائندوں سمیت ، انسانی حقوق کے بین الاقوامی مبصرین اور حقائق سے متعلق مشن اور دیگر کو مکمل رسائی کی اجازت دے۔

سفیر نے بھارت کی طرف سے اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کی قرار دادوں کی خلاف ورزیوں کی شدید الفاظ میں مذمت کی ، اور ریاستی جبر کو ختم کرنے اور اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کی قرار دادوں کے مطابق کشمیری عوام کی مرضی کے تعین کے لئے ایک منصفانہ اور غیرجانبدارانہ رائے شماری کے انعقاد کے لئے عالمی برادری سے فوری مداخلت کا مطالبہ کیا۔ 

سفیر نے واضح  کیا کہ دنیا موجودہ ہندوستانی حکومت کی انتہا پسندی اور کشمیریوں کے خلاف ان کے جاری ظلم و ستم کو آہستہ آہستہ تسلیم کررہی ہے۔ انہوں نے اس بات پر زور دیا کہ حکومت پاکستان نے تنازعہ کشمیر کے حل کے لئے سیاسی اور سفارتی پالیسی پر عمل پیرا ہونے کا فیصلہ کیا ہے۔ انہوں نے اس بات پر زور دیا کہ حکومت پاکستان  اور اس کے عوام مسئلہ کشمیر کے لئے پوری طرح پرعزم ہیں۔ پاکستان کشمیری بھائیوں اور بہنوں کے حقوق کے لئے ہمیشہ دنیا میں ضمیر کی آواز بنے گا اور کشمیر کاز  ثمر آور ہوگا۔سفیر نے مقبوضہ جموں و کشمیر کے مظلوم عوام  کی حق خود ارادیت کے حق میں اپنی جائز جدوجہد میں  ان کی سیاسی ، اخلاقی  اور سفارتی مدد جاری رکھنے  کا اعادہ کیا ۔