قومی ٹیم کا بڑا مسئلہ کیا ہے؟ ہیڈ کوچ نے بتادیا

لاہور: قومی کرکٹ ٹیم کے ہیڈ کوچ مصباح الحق نے ٹیم پر ہونے والے تنقید کو درست قرار دیتے ہوئے کہا کہ جب آپ نہیں جیتتےتو مایوسی ہوتی ہے۔ لاہور میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے ہیڈکوچ پاکستان کرکٹ ٹیم مصباح الحق نے کہا کہ قومی ٹیم پر تنقید درست ہے، جو لوگ تنقید کرتےہیں وہ ٹیم کی صلاحیتوں پر یقین رکھتے ہیں کیونکہ چاہنے والوں کو ٹیم سےامید ہوتی ہے۔مصباح الحق نے کہا کہ جب آپ برا کھیلتے ہیں تو تنقید ہوتی ہےجو درست ہے، جب آپ نہیں جیتتےتو مایوسی ہوتی ہے۔

ہیڈ کوچ کا کہنا تھا کہ ٹیم نےماضی میں بھی اپنی صلاحیتیں دکھائیں ہیں، نیوزی لینڈ کے خلاف پہلے ٹیسٹ میں پہلے ٹیم نے لڑائی کی مگر فتح حاصل نہ کرسکے۔ ہیڈ کوچ مصباح الحق نے ٹیم کی خامی کی جانب اشارہ کرتے ہوئے کہا کہ سب سے بڑا مسئلہ ڈراپ کیچز کا ہے،جس پر کام کی ضرورت ہے اس ہار سے سیکھ کر اعتماد کو بڑھاناہے۔واضح رہے کہ پاکستان کرکٹ بورڈ نے ہیڈ کوچ مصباح الحق کو جنوبی افریقہ کے خلاف سیریز کے بعد ہٹانے کا فیصلہ کرلیا ہے، قومی ٹیم کے ہیڈ کوچ بننے کے بعد سے مسلسل ناکامیوں پر مصباح کو شدید تنقید کا سامنا ہے۔

پی سی بی حکام کی جانب سے انگلینڈ کے سابق ہیڈ کوچ اینڈی فلاور اور بھارت کو ورلڈ کپ جتوانے والے جنوبی افریقی سابق کھلاڑی گیری کرسٹن کے بارے میں رابطے کیے گئے ہیں۔یاد رہے کہ پاکستان کو دوسرے ٹیسٹ میں نیوزی لینڈ کے خلاف اننگز اور 176 رنز کی عبرتناک شکست کا سامنا کرنا پڑا، دورہ نیوزی لینڈ میں قومی ٹیم 5 میں سے صرف ایک میچ ہی جیتنے میں کامیاب ہوئی۔

اس سے قبل مصباح کی کوچنگ میں قومی ٹیم نے ہوم سیریز میں بنگلہ دیش اور سری لنکا کے خلاف کامیابی حاصل کی تھی جبکہ سری لنکا کے خلاف ٹی ٹوئنٹی سیریز میں ناکامی کا سامنا کرنا پڑا تھا۔یاد رہے کہ آئی سی سی ورلڈ کپ 2019 کے بعد مصباح کو ہیڈ کوچ اور چیف سلیکٹر کے کی ذمہ داریاں سونپی گئی تھیں تاہم بعدازاں ان سے چیف سلیکٹر کا عہدہ لےکر سابق کرکٹر محمد وسیم کے سپرد کردیا گیا تھا۔