سعودی عرب میں کرایہ داری نظام میں تبدیلیاں کر دی گئیں

سعودی عرب میں کرایہ داری نظام میں بڑی تبدیلیاں کر دی گئی ہیں جس کے تحت ایجار سسٹم میں عدم اندراج اور دیگر خلاف ورزیوں پر 25 ہزار ریال تک جرمانے ہوں گے۔ سعودی عرب میں کرائے کے قانون کو منظم کرنے کے لیے جاری کیے گئے ’ایجار‘ سسٹم میں قوانین کی خلاف ورزیوں پر ایک سے 25 ہزار ریال جرمانے کے علاوہ لائسنس کی منسوخی کی سزا بھی مقرر کی گئی ہے۔’ایجار‘ سسٹم کی جانب سے جاری قواعد کی وضاحت کرتے ہوئے کہا ہے کہ قانون کے مطابق ۔ کسی بھی فلیٹ، عمارت، دکان یا دیگر جائیداد کو کرایے پر دیتے وقت حکومت کے ’ایجار‘ سسٹم میں کرائے نامے کو رجسٹر کرنا لازمی ہے۔

کرایے کی وصولی کے لیے دی جانے والی رسید پر ’ایجار‘ سسٹم کا رجسٹریشن نمبر اور تاریخ درج نہ کرنا بھی خلاف ورزی شمار ہوگی جس پر کم از کم ایک ہزار اور زیادہ سے زیادہ 25 ہزار ریال جرمانہ عائد کیا جائے گا جبکہ پراپرٹی ڈیلر یا اسٹیٹ ایجنٹ کا دفتر بھی ایک برس کے لیے سیل کیا جا سکتا ہے۔ قانون کے مطابق کرایے کی مد میں وصول کی گئی رقم اصل مالک کو ادا کیے بغیر ذاتی طور پر استعمال کرنے والے پراپرٹی ڈیلر یا اسٹیٹ بروکر پر 25 ہزار ریال تک جرمانے کے علاوہ لائسنس بھی مستقل طور پر منسوخ کر دیا جائے گا۔

ایجار سسٹم کے تحت سب سے کم جرمانہ کرایے نامے کو ’ایجار‘ کے پورٹل پر اپ لوڈ نہ کرنا ہے جس پر ایک ہزار ریال جرمانے کے علاوہ ایجنسی کا لائسنس بھی ایک برس کے لیے منسوخ کیا جا سکتا ہے۔ واضح رہے کہ آئندہ برسوں میں روایتی کرایے ناموں کی جگہ ’ایجار‘ کے پورٹل سے ڈیجیٹل کرایے نامے ہی جاری کیے جائیں گے جسے نیشنل ایڈریس سے منسلک کیا جائے گا-