بلاول نے آئی ایم ایف سے نیا معاہدہ کرنے کا مطالبہ کردیا

پاکستان پیپلز پارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے عالمی مالیاتی فنڈ (آئی ایم ایف) سے دوبارہ معاہدہ کرنے کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ پاکستان کے غریب عوام کے حقوق کی سودے بازی کی گئی ہے۔

اسلام آباد میں پارلیمنٹ ہاؤس کے باہر میڈیا سے گفتگو میں بلاول بھٹو زرداری نے وزیراعظم کے مشیر برائے خزانہ حفیظ شیخ پر تنقید کرتے ہوئے کہا کہ وہ آئی ایم ایف کے نمائندے ہوسکتے ہیں،ہم عوامی نمائندے ہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ جس تیزی سے منہگائی میں اضافہ ہوا ہے پاکستان کی تاریخ میں نہیں ہوا اور 15 ماہ میں جتنا قرض لیا گیا ماضی میں اتنا قرض کبھی نہیں لیا گیا، پاکستان پیپلزپارٹی اورعوام کا مطالبہ ہے کہ پھاڑ دو پی ٹی آئی ایم ایف کے معاہدے کو۔

انہوں نے کہا کہ ٹیکس میں 400 ارب کا شارٹ فال ہے، اس ملک کا ہر طبقہ پریشان ہے، عوام کا معاشی قتل ہورہا ہے،خوراک کی مہنگائی ایک سال میں 78 فیصد بڑھی، کراچی میں ایک شخص نے خودکشی کی کیونکہ وہ بچوں کے کپڑے نہیں خرید سکتا تھا۔

‘حکومت تنقید پر ذاتیات پر آجاتی ہے اور گالیاں دیتی ہے’

چیئرمین پیپلز پارٹی کا کہنا تھا کہ کسانوں اور مزدوروں کا معاشی قتل ہو رہا ہے ،حکومت تنقید پر ذاتیات پر آجاتی ہے اور گالیاں دیتی ہے ،یہ حکومت گالم گلوچ اور ماضی میں رہنے کی عادی ہے۔

بلاول کا مزید کہنا تھا کہ عمران خان نے کہا مودی بڑے آفس میں چھوٹا آدمی ہے، میں نے عمران خان کی بات دہرائی تو اسپیکر اور ممبرز بولنے لگے۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ آئی ایم ایف کے ساتھ دوبارہ معاہدے کیے جائیں،آپ نالائق ہیں، نااہل ہیں، حکومت نہیں چلا سکتے، افسوس کہ حکومت حقیقت پر بات نہیں کرتی۔

بلاول کا کہنا تھا کہ قومی اسمبلی میں میری تقریر کاجو حصہ حذف کیاگیا وہ آئی ایم ایف ڈیل کی سچائی پرمبنی تھا، آئی ایم ایف معاہدے سے کوئی مثبت تبدیلی نہیں آئی۔

Read Previous

پاک فضائیہ کا تربیتی طیارہ گر کر تباہ

Read Next

کورونا وائرس کی نشاندہی کرنے والی ایپ متعارف

Leave a Reply

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے