اعصام الحق نے ٹینس مقابلوں کی جلد بحالی کو مشکل قرار دیدیا

پاکستانی ٹینس سٹار اعصام الحق نے کہا ہے کہ کورونا وائرس کے باعث فوری طور پر ٹینس کی بڑے پیمانے پر انٹرنیشنل سرگرمیاں شروع کرنا بہت مشکل ہے۔

ملتان پریس کلب میں پریس کانفرنس کے دوران اعصام الحق کا کہنا تھا کہ کسی بھی بڑے ٹورنامنٹ میں شرکت کیلئے دنیا کے ہر کونے سے کھلاڑی پہنچتے ہیں، یہ کوئی کرکٹ یا فٹ بال کی طرح نہیں کہ بس دو ممالک کی ٹیمیں ہیں اور انہیں ایک جگہ رکھ لیا جائے۔ تمام ایس او پیز مکمل کر لئے جائیں اور پھر میچوں کا انعقاد کیا جائے۔

ٹینس کے کھلاڑی مختلف فلائٹس لے کر اپنے ملک سے وینیو پر پہنچتے ہیں جہاں انہوں نے ٹورنامنٹس کھیلنا ہوتا ہے، ایسے میں ان کھلاڑیوں کے ٹیسٹ اور پھر انہیں قرنطینہ کے مرحلے سے گزارنا انتہائی مشکل ہوگا، اس لئے بڑے انٹرنیشنل ٹورنامنٹس کی شروعات اتنی آسان نہیں جتنی فٹ بال اور کرکٹ میں ہیں۔

اعصام الحق کے مطابق ایک ہی ملک میں رہتے ہوئے ایونٹ کرانا آسان ہوتا ہے اور اس میں ایس او پیز بھی مکمل کئے جا سکتے ہیں۔ مقامی سطح پر حفاظتی تدابیر کے ساتھ ٹورنامنٹ کرایا جا سکتا ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ اسی طرح نمائشی میچوں کا بھی انعقاد کیا جا سکتا ہے لیکن ٹینس کے بین الاقوامی ٹورنامنٹس جن میں خاص طور پر گرینڈ سلام بھی شامل ہیں ،ان کے شروع ہونے میں ابھی وقت لگے گا۔

قومی ٹینس سٹار نے کہا کہ مقامی سطح پر ہونے والے ایونٹس میں شائقین کو بھی اکٹھا کیا جا سکتا ہے یا ایسے جگہ جہاں کورونا وائرس کے خطرات کم ہوں وہاں فینز کے ساتھ میچز کرانے میں حرج نہیں، آنے والے دنوں میں چھوٹے ٹورنامنٹس شروع ہوتے ہیں تو وقتی طور پرمداحوں کے بغیر ہوں گے۔ اعصام الحق نے اس موقع پراپناریکٹ کوورنا وائرس سے متاثر ہ افراد کی مدد کیلئے عطیہ کرنے کا اعلان بھی کیا۔